تعارف

تعارف

انجمن ترقّیٔ اردو، برصغیر کا قدیم ترین ثقافتی و ادبی ادارہ ہے جو ۱۹۰۳ء میں آل انڈیا مسلم ایجوکیشنل کانفرنس کی ایک شاخ کی حیثیت سے سرسیّد کے  رفیقِ کار نواب محسن الملک نے قائم کیا تھا۔

اس کے بنیادی مقاصد اردو زبان و ادب کی ترویج، اشاعت، تراجم، تدریس اور تحقیق تھے۔ انجمن کے پہلے صدر اس وقت کے مشہور مستشرق سرتھامس آرنلڈ، معتمد علامہ شبلی نعمانی جب کہ دیگر عہدے داران میں مولوی نذیر احمددہلوی، مولانا الطاف حسین حالی اور مولوی ذکاء اللہ تھے۔ سرپرستوں اور معاونوں میں قائداعظم محمد علی جناح، علامہ اقبال، شہیدِ ملّت لیاقت علی خاں، سردار عبدالرّب نشتر، مولانا حسرت موہانی، مولانا ظفر علی خاں، پیرالٰہی بخش، ڈاکٹر  محمد شہید اللہ، سر غلام حسین ہدایت اللہ اور پیر حُسام الدین راشدی جیسے بزرگوں کے نام شامل ہیں۔

باباے اردو مولوی عبدالحق ۱۹۱۲ء میں انجمن کے معتمد ہوئے اور اس کا دفتر علی گڑھ سے اورنگ آباد لے گئے۔ پھر ۱۹۳۸ء میں وہ انجمن کا دفتر اور کتابوں کا بیش بہا اثاثہ دہلی لے آئے۔ ان کی سرپرستی میں انجمن نے نہ صرف غیرمعمولی ترقی کی بلکہ اس کی انتظامی بنیادیں بھی مضبوط ہوئیں۔ پاکستان بننے کے بعد قائداعظم محمد علی جناح کی ایما پر باباے اردو اسے دہلی سے کراچی لے آئے۔ مولوی عبدالحق کی وفات کے بعد ۱۹۶۱ء میں جناب جمیل الدین عالی  نے انجمن کے معتمد کی ذمے داری سنبھالی اور باباے اردو کے مشن کو بہت خوش اُسلوبی سے جاری رکھا۔ انجمن نے قومی زبان کو اعلیٰ سطح پر تدریس کے لیے رائج کرنے میں جو ٹھوس بنیادی کام کیا، اس کے عملی نمونے وفاقی اردو کالج براے فنون،  قانون اور سائنس کی تعمیر و قیام ہیں۔ اس کالج کو جناب جمیل الدین عالی کی کوششوں سے نومبر ۲۰۰۲ء میں وفاقی اردو یونی ورسٹی کا درجہ دیا گیا۔

ضعیفی و علالت کے باعث جناب جمیل الدین عالی نے ۱۹؍ مارچ ۲۰۱۴ء کو معتمد کا عہدہ ڈاکٹر فاطمہ حسن کے سپرد کردیا۔

ڈاکٹر فاطمہ حسن ۳۰؍ مارچ ۲۰۱۹ء تک معتمد اعزازی رہیں اور اس روز ہونے والے انتخابات میں جناب واجد جواد (صدر اعزازی)، محترمہ زاہدہ حنا (معتمد اعزازی) اور سیّد عابد رضوی (خازن اعزازی) منتخب ہوئے اور دستور کے مطابق اپنی ذمے داریاں انجام دے رہے ہیں۔

انجمن سے علمی و تحقیقی کتابوں کے علاوہ ادبی جریدہ ماہ نامہ ’’قومی زبان‘‘ اور تحقیقی مجلّہ شش ماہی ’’اردو‘‘ بھی شائع ہوتے ہیں۔

Introduction

Anjuman Taraqqi-e-Urdu is the oldest literary and cultural organisation of subcontinent. It was established in Aligarh in 1903 as a literary and cultural division of All India Muslim Educational Conference by Nawab Mohsin-ul-Mulk, a close associate of Sir Syed Ahmed Khan.

The basic aims and objectives of the establishment of Anjuman Taraqqi-e-Urdu included the promotion of Urdu language and literature through publications, translations, education and research. Anjuman’s first President was Sir Thomas Arnold, the renowned orientalist. Other prominent literary figures who contributed towards Anjuman and its mission as office-bearers include Shibli No’mani, Maulvi Nazeer Ahmed Dehlvi, Altaf Hussain Hali and Moulvi Zakaullah. Later on, its patrons included luminaries, such as, Quaid-e-Azam Muhammad Ali Jinnah, Allama Iqbal, Liaqat Ali Khan, Sardar Abdur Rab Nishter, Hasrat Mohani, Zafar Ali Khan, Peer Ilahi Bakhsh, Dr Muhammad Shaheedullah, Sir Ghulam Hussain Hidayatullah, and Peer Hussamuddin Rashdi.

In 1912, the offices of the Anjuman were moved to Aurangabad from Aligarh and in 1938, Anjuman was shifted to Delhi. Under the guidance of Moulvi Abdul Haq Anjuman played a very vital role for the promotion of Urdu literature and language. After the independence, Abdul Haq brought Anjuman to Pakistan and established its offices at Karachi. After Abdul Haq’s death in 1961, Jameeluddin Aali assumed the charge as Secretary and through his tireless efforts Anjuman continued its mission, promoting Urdu, publishing a large number of books and magazines and successfully running Urdu College, which was made a university in 2002. Due to ill health, Aali handed over the charge to Dr Fatema Hasan who served as Secretary of Anjuman till March 30, 2019.

As a result of elections held on March 30, 2019, new office-bearers were elected. These newly elected office bearers, working till now, are: Wajid Jawad (President), Zahida Hina (Secretary) and Abid Rizvi (Treasurer).

Aside from academic and research works, Anjuman also publishes monthly ‘Qaumi Zaban’, a literary magazine, and bi-annual ‘Urdu’, a research journal.